bus hijack in Pakistan 2019 46

گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے پچیس سے زائد مسافر اپنی جمع پونجی سےمحروم

گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے پچیس سے زائد مسافر اپنی جمع پونجی سےمحروم




اطلاع کے۔مطابق کراچی سے راولپنڈی جانے والی مسافر بس کو بہاولپور اور ملتان کے درمیان لوٹنے کی واردات میں گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے پچیس سے زائد مسافر اپنی جمع پونجی سے نہ صرف محروم ہوئے بلکہ متاثرین میں شامل خواتین اوربچے شدید خوف وہراس کی حالت میں چار گھنٹے تک بے سروسامانی کی حالت میں ویران سڑک پر مدد کے لئے خوار ہوتے رہے.

پنجاب حکومت اور پولیس سے مطالبہ ہے کہ ڈاکوؤں کو جلد از جلد گرفتار کرے اور بہاولپور کے نااہل پولیس اہلکاروں کو سزا دیں۔

دوسری طرف مسافروں نے روڈ بلاک کر احتجاج شروع کیا توپنجاب پولیس کے افسران وملازمین نے انہیں ہراساں کرتے ہوئے زبردستی احتجاج ختم کرواکر وہاں سے روانہ کردیا۔گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے مسافروں نے راولپنڈی آنے کے لئے گلگت بلتستان کوچ سروس سے ٹکٹس لئے تھے تاہم گلگت بلتستان کوچ سروس کی انتظامیہ نے بس نہ ہونے کا بہانہ کرکے مسافروں کو وڑائچ کوچ نامی بس سروس کے حوالے کیا۔


وڑائچ کوچ کراچی صدر سے راولپنڈی کے لئے روانہ ہوئی اور سترہ فروری کی رات تقریباً نو بج کر پینتالیس منٹ پر یہ افسوسناک واقعہ پیش آیا۔متاثرین کے مطابق بس میں گلگت بلتستان کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے پچیس سے زائدمسافرموجود تھے۔

سڑک پر رکواٹیں کھڑی کرکے بس کو روکا گیا۔جس کے بعد دومسلح ڈکیت بس کے اندر داخل ہوئے جبکہ کلاشنکوفوں سے مسلح دو ڈکیت بس کے باہرپہرہ دیتے رہے۔ڈکیتی کی واردات کے دوران ڈاکوؤں نے تمام مسافروں سے نقدی،موبائل فونز اوردیگرقیمتی اشیاء چھین لئے اورفرارہوگئے۔




Spread the love
  • 18
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
    18
    Shares
  • 18
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply