nagar valley gilgit baltistan 37

پاکستان اور گلگت بلتستان

پاکستان اور گلگت بلتستان

وطن عزیز پاکستان کو جب ضرورت پڑی گلگت بلتستان نے اپنا خون پیش کیا ہے جس کی گوہی سیاچن گلیشیئر، کرگل کی چوٹیوں اور وزیرستان کی پہاڑیاں دیے رہے ہیں۔
اب جب اس خطے کو حقوق دینے کی باری آتی ہے تو سب کو سانپ سونگھ جاتے ہیں، کہیں سے کوئی سنوائی نہیں ہورہی، جسکی وجہ سے اس خطے کے عوام میں خاص کر نوجوان نسل میں ایک طرح کی ناامید جنم لے رہی ہے۔۔۔ یوں لگتا ہے کہ حکومت اور مقتدر ادارے اس خطے کو حقوق دینا ہی نہیں چاہتے یا وفاق میں کشمیری رہنماؤں کی اثر وسوخ اتنا زیادہ ہے کہ وفاق بھی کسی بھی قسم کی حقوق دینے سے ہچکچاتے ہیں۔۔۔ اب سپریم کورٹ نے بھی گلگت بلتستان کی مستقبل کو حکومت وقت کے کورٹ میں ڈال دیا ہے، لھذا حکومت وقت کو چاہئیے کہ اپوزیشن سے ملکر کچھ ایسا حقوق گلگت بلتستان کو دے جس کیوجہ سے مسئلہ کشمیر پر بھی اثر نہ ہو۔
میرے خیال میں اس کا سب سے بہترین حل یہ ہے کہ اس خطے کو آزاد کشمیر طرز کی خودمختاری دے دیا جائے اگر ایسا نہیں کر سکتے تو کم از کم عبوری صوبے کا درجہ دیا جائے۔۔۔ ان دونوں صورتوں میں مسئلہ کشمیر پر بھی کسی قسم کی کوئی مسئلہ نہیں ہونگے۔ اور اس خطے کی عوام کی محرومیوں کا بھی کسی حد تک ازالہ ہو گا۔
دوسری طرف جب سے سپریم کورٹ نے فیصلہ سنایا ہے کچھ ناسمجھ لوگ اس فیصلے کی آڑ میں جانے انجانے میں لوگوں کو بغاوت پر ابھارنے کی کوشش کر رہے ہیں، نوجوانوں کو چاہئے ان سے دور رہیں یہ لوگ نہ آپ کے ساتھ مخلص ہے اور نہ اپنے وطن کیساتھ مخلص ہے یہ بات سب کو معلوم ہونا چاہئیے کہ پاکستان سے ہم ہے اور ہم سے پاکستان ہے لھذا ایسے پروپیگنڈوں سے اپنے آپ کو بچا کر رکھیں پرامن طور پر ہمارا احتجاج جاری رہنا چاہئے ان شاءاللہ وہ وقت اب دور نہیں کہ جب ہم اپنا آئینی اور بنیادی حقوق حاصل کرنے میں کامیاب ہونگے۔
(مہ جبیں)

Spread the love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply