Chinese Marriage scandle with pakistani girls 52

پاکستانی لڑکیوں کو چائنہ لے جانے کے بعد مبینہ طور پرعصمت فروشی

پاکستانی لڑکیوں کو چائنہ لے جانے کے بعد مبینہ طور پرعصمت فروشی

Chinese Marriage scandle with pakistani girls


پاکستان میں مذہب تبدیلی کے جعلی سرٹیفکیٹ دکھا کر پاکستانی لڑکیوں سے شادی کرکے انہیں چائنہ لے جانے کے بعد مبینہ طور پرعصمت فروشی کے دھندے پر لگانے والے مزید تین چائنیز باشندے تین پاکستانی لڑکیوں سمیت دھرے گئے۔ایف آئی اے امیگریشن نے تینوں جوڑوں کو اسلام آباد ایئرپورٹ سے اس وقت حراست میں لیا جب وہ بیرون ملک سفر کرنے والے تھے۔ایف آئی اے ذرائع کے مطابق گرفتار کئے گئے

تینوں جوڑے خود کو شادی شدہ ظاہر کر رہے تھے۔جنہیں ایف آئی اے امیگریشن نے اپنے سیل میں منتقل کرکے تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کر دیا ہے۔گرفتار کئے گئے چائنیز باشندوں میں جوونچو، زہنگ زہلی جبکہ لڑکیوں میں 27 سالہ ثمرین فاطمہ ولد غنی شہباز،23 سالہ معصومہ کلثوم زوجہ شکینگ زو اور21 سالہ رابعہ شامل ہیں۔واضح رہے کہ ملک کے مختلف شہروں سمیت جڑواں شہروں راولپنڈی اسلام آباد میں چائنیز باشندوں اور پاکستانی سہولت کاروں پرمشتمل گینگ متحرک ہیں جو غریب گھرانوں کی بھولی بھالی لڑکیوں سے جعلی شادی کرکے انہیں چائنہ سمگل کرتے ہیں



جہاں نہ صرف انہیں عصمت فروشی کے دھندے پر لگاتے ہیں بلکہ ان کے جسم کے اعضاء نکال کر فروخت بھی کیا جاتا ہے۔قبل ازیں بھی ایف آئی اے جڑواں شہروں میں اس گھناؤنے دھندے میں ملوث چائنیز باشندوں اور پاکستانی ایجنٹوں کو گرفتار کرچکی ہے۔چند روز قبل بھی ایف آئی اے نے ایک کامیاب کارروائی کرکے تین چائنیز باشندوں سمیت سات افراد کو گرفتار کیا تھا۔ان چائنیز باشندوں کے ساتھ گرفتار ہونے والے دونوجوانوں کا تعلق گلگت بلتستان سے بتایا جاتا ہے۔

جن میں سکردوسٹی سے تعلق رکھنے والا ساجد اور ہنزہ سے تعلق رکھنے والا شفیق نامی نوجوان شامل ہیں۔تاہم ایف آئی اے نے اس حوالے سے تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کردیا ہے۔


Spread the love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

پاکستانی لڑکیوں کو چائنہ لے جانے کے بعد مبینہ طور پرعصمت فروشی” ایک تبصرہ

Leave a Reply